Mawla Ali Shrine

Excellence & Sayings of Hadrat Sayyiduna Imam Ali al Murtuda KaramAllahu Wajhul Kareem

مولا علی کا روضہسے اقتباسات ہلیت ال اولیاء وا طبقات ال آصفیہ کی طرف سے شیخ ابو نیام احمد الاصفہانی (علی رحمہ اللہ)

فضیلت حضرت سیدنا امام علی المرتضیٰ کرم اللہ وجہہ الکریم

لوگوں کے چوتھے آقا، اللہ رب العزت اور اس کی وفادار مخلوق کے محبوب، شہر علم کے دروازے، حکم دینے والے، عقل و دانش کے مالک، تشبیہات بیان کرنے والے، پاکیزہ نعمت، اخلاقی حاکمیت ہیں۔ یقین کی جبلت، سچائی کا علمبردار، تقویٰ کا علمبردار، علم کا حسن، سچا بیان کرنے والا جس کا دل حکمت سے بھرا ہوا ہے، جس کی زبان سب سے زیادہ جستجو کرنے والی ہے اور جس کے کان سب سے زیادہ ہوشیار ہیں۔ پرہیزگاروں کے سردار، حکیموں کا آئینہ، صالح منصف، نہایت بردبار پیر اور صالح خلیفہ علی بن ابی طالب، اللہ تعالیٰ ان کے چہرے پر رحمت نازل فرمائے۔

سعد رضی اللہ عنہ بیان کرتے ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے حضرت علی رضی اللہ عنہ سے فرمایا: ’’تم میرے لیے وہی ہو جو ہارون موسیٰ کے لیے تھے۔‘‘

سعد نے یہ بھی روایت کیا ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ایک مرتبہ علی رضی اللہ عنہ سے فرمایا کہ اللہ ان کے چہرے کو خوش رکھے: ’’تم مجھ سے ہو اور میں تم سے ہوں۔‘‘

ابن عباس رضی اللہ عنہما بیان کرتے ہیں کہ حضرت عمر رضی اللہ عنہ فرمایا کرتے تھے: ”علی ہم میں سب سے زیادہ انصاف کرنے والے جج ہیں۔

نیز اس موضوع پر ابن مسعود نے کہا: “قرآن سات مقامی بولیوں میں نازل ہوا۔ اس کا ہر حرف ایک ظاہری اور باطنی معنی رکھتا ہے اور علی کو دونوں کا علم ہے۔

ہبیرہ بن باریم نے بیان کیا کہ حسن بن علی رضی اللہ عنہ ان دونوں سے راضی ہوئے۔ایک دفعہ اپنے والد کی شہادت کے بعد خطبہ دیا اور اپنی تقریر کے دوران فرمایا: “وہ شخص جو ابھی کل ہی رخصت ہوا ہے، اس کے علم کا مقابلہ نہ ماضی میں کوئی کر سکا اور نہ آئندہ کوئی کر سکے گا۔ “

اقوال حضرت سیدنا امام علی المرتضیٰ کرم اللہ وجہہ الکریم

سعید بن المسیب نے بیان کیا کہ علی رضی اللہ عنہ نے اپنے چہرے کو مبارک فرمایا: “حقیقی نعمتیں اولاد یا دولت نہیں ہیں، بلکہ وہ علم، بردباری اور اپنے رب کے لیے بڑھتی ہوئی عقیدت ہیں۔ جب تم نیکی کرو تو اللہ کی حمد کرو اور جب ناکام ہو جاؤ تو اس سے معافی مانگو۔ یقیناً اس دنیا میں دو قسم کے لوگوں کے سوا کوئی فائدے نہیں، 1) جو کوئی خطا کرے پھر توبہ کے ساتھ اس کی اصلاح کرے۔ اور 2) وہ شخص جو نیکی میں جلدی کرتا ہے اور وہ اپنے مطلوبہ دینی فرائض کی ادائیگی میں کوتاہی نہیں کرتا، تو بھلائی کی برکت سے اس کے اعمال میں کمی کیسے آسکتی ہے۔”

بکر بن خلیفہ بیان کرتے ہیں کہ علی رضی اللہ عنہ نے ایک مرتبہ فرمایا: ’’اے لوگو، میں اللہ تعالیٰ کی قسم کھا کر کہتا ہوں اور اس کے نام کی قسم کھا کر کہتا ہوں کہ اگر تمہاری آنکھیں اس کے خوف اور اس کی تڑپ سے رونے سے پگھل جائیں اور تم اس حالت میں بھی رہو۔ دنیا جب تک قائم رہے گی، ہر قسم کی عبادات کے ساتھ مل کر اس کی عظیم اور بے شمار نعمتوں کا شکر ادا کرتے رہنا، یہ اس کے شکر گزاری کے اظہار کے لیے کافی نہیں ہے کہ اس نے آپ کی اسلام کی طرف رہنمائی کی۔

علی رضی اللہ عنہ نے اپنے چہرے کو مبارک فرمایا: علم والے سے محبت کرنا اور اس کے ہاتھ سے سیکھنا ایک قرض ہے جو کبھی چکا نہیں سکتا۔

علی رضی اللہ عنہ نے اپنے چہرے کو مبارک فرمایا: زمین کبھی بھی ایسے شخص سے خالی نہیں رہے گی جو اللہ کی حاکمیت کی دلیل اور اس کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی شہادت لے کر آئے، ورنہ اللہ کی آیات اور کھلی نشانیاں منسوخ ہو جائیں گی۔ ایسے سچے انسان بہت کم ہیں، حالانکہ وہ اللہ کے نزدیک سب سے بلند ہیں۔ ان کے ذریعے اللہ تعالیٰ اپنے پیغام کی حفاظت کرتا ہے، اور وہ انہیں اپنے پاس اس وقت تک واپس نہیں لے گا جب تک کہ وہ اپنے ہم وطنوں کے حوالے نہ کر دیں۔ یہ لوگ اپنے دلوں میں ایسے بیج بونے کی کوشش کرتے ہیں۔ لہٰذا ان کے دلوں سے علم نکلتا ہے اور وہ اس سے اس خطہ کو لے لیتے ہیں جسے امیر لوگ ناہموار سمجھتے ہیں اور جاہل جس چیز کو قابل مذمت سمجھتے ہیں۔ درحقیقت اللہ کے لوگ اس دنیا میں جسموں کے ساتھ رہتے ہیں جن کی روحیں سب کے اوپر مشاہدہ کرنے والے کے سحر میں ہیں۔ یہ زمین پر اللہ کے نائب ہیں اور یہی اس کے دین کی طرف بلانے والے ہیں۔

الحسین بن علی رضی اللہ عنہ نے بیان کیا کہ ان کے والد رضی اللہ عنہ نے ان دونوں سے فرمایا: “انسان کے لیے سب سے مشکل کام تین ہیں، 1) اپنی ذمہ داری کو خوشی سے ادا کرنا، 2) ہر حال میں اللہ کو یاد کرنا۔ اور 3)، اپنے بھائی کی مدد کرنا جب اسے پیسے کی ضرورت ہو۔”

———
سے اقتباسات
ہلیۃ الاولیاء وطبقات الاصفیہ از شیخ ابو نعیم احمد اصفہانی (علیہ الرحمہ)۔

Asl E Nasl E Safaa Wajhe Wasle Khuda
باب الفصل ولایت پہ لاخو(ن) سلام

مرتضیٰ شیرے حق اشجع العاشجی
ساقی ای شیرو شربت پہ لاخو(ن) سلام

~ اعلیٰ حضرتامام احمد رضا خان رحمہ اللہ

السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

Related Posts

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *